کوکا کولا پاکستان کے ساتھ طویل اور سخت تنازعہ کے اختتام پرایک جامع معاہدہ طے پا گیا

آئی یو ایف ، کوکاکولا کمپنی (ٹی سی سی سی) پاکستان میں کوکاکولا کے بوٹلرسی سی آئی کے درمیان کوکاکولا بیوریجز پاکستان لمیٹڈ میں روزگارکےتحفظ اور ٹریڈ یونین کے حقوق پر ایک طویل اور سخت تنازعہ کامیابی سے حل کرلیاگیا ھے۔ کوکاکولا بیوریجزپاکستان دراصل کوکا کولا کمپنی اور سی سی آئی کی مشترکہ ملکیت ھے۔ معاہدے کی رو سے، غیر قانونی طریقے سے نکالے گئے تمام ورکرز کو مکمل تنخواہ کے ساتھہ بحال کیا جائے گا۔ کمپنی ، پیپلز ایمپلائزیونین (پی ای یو) کو ملتان میں آئی یو ایف کے ممبرز کی نمائندہ کی حیثیت سے تسلیم کرتی ھے اور یہ ضمانت دیتی ھے کہ وہاں یونین کے ممبران اور عہدیداراں کو ہراساں یا ان کے ساتھہ کوئی ذیادتی نہیں کی جائے گی۔
غیر مستحکم اور غیر مستقل روزگار کے عمل کی اصلاح کے لیے، جو کہ ٹریڈ یونین حقوق کے منافی ھے، معاہدہ نے ۱۸۷ مستقل اور براہ ِراست ملازمتوں کے مواقع پیدا کیے ھیں۔
بین لا قوامی سطح پرمعاہدہ کی نگرانی آئی یو ایف اور سی سی آئی ۔ ٹی سی سی سی کی مشترکہ کمیٹی کے ذریعے ھوگی اور اس پرعمل درآمد مقامی طریقے سے ھوگا۔ پاکستان میں معاہدہ پر عمل درآمد کے عمل میں آئی یو ایف کے ممبران کی واضح نمائندگی ھوگی۔
غلام رسول، پیپلزایمپلائز یونین ملتان کے صدر ہیں ان کا کہنا ھے کہ ” یہ معاہدہ ہمارے ممبران کے حقوق کو دوبارہ محفوظ کر چکا ھے جو کہ ایک سال پہلے نا جائز طور بر طرف کیے گئے تھے اور اس معاہدے کے بعد ھم ملتان میں یونین کے حقوق کوبہترطریقے سےاستعمال کریں گے۔
خالد پرویز، رحیم یار خان میں کوکاکولا یونین کے صدر ہیں وہ معاہدہ کے بارے میں کہتے ھیں کہ ” کوکاکولا پاکستان میں ٹریڈ یونین کے حقوق کو تسلیم کرانے میں یہ معاہدہ بہت اہم ہے اور آئی یو ایف سے ملحق نیشنل فیڈریشن فوڈ بیورجز اینڈ ٹوبیکو ورکرزنے ایک بہت اہم مرحلہ عبور کر لیا ھے ۔”
خائستہ رحمٰن کوکاکولا بیوریجز اسٹاف اینڈ ورکرز یونین کراچی کے صدراورآئی یوایف گلوبل الائنس آف کوکاکولا ورکرز کی اسٹیئرنگ کمیٹی کے ممبر ھیں، کہتے ھیں ” یہ پاکستان میں کوکاکولا ورکرزکی بہت بڑی فتح ھے اب ھم کام کی جگہ پرعزت و وقار کے ساتھہ اطمینان سے کام کر سکتے ھیں۔”
یہ معاہدہ 25 جولائی کی صبح 4 بجے آئی یو ایف کے جنیوا سیکریٹیریٹ میں 19 گھنٹے کی گفت و شنید کے بعد ھوا تھا۔ ایگریمنٹ پر رسمی طور پر ایک دن بعد دستخط ہوئےاوراس دوران آئی یو ایف،ٹی سی سی سی اور سی سی آئی کے درمیان مشاورت جاری رھی جبکہ اس معاہدے کی تصدیق آئی یو ایف کے ممبرز نے پاکستان میں کی۔
دونوں اطراف سے شروع ھونے والی گفت و شنید ایک مضبوط حوصلے کو ظاہر کرتی ھے جو ایک مشترکہ رضا مندی کا ما حاصل ھے جو ان دو دنوں تک ھوتارھا۔ سی سی آئی مندوبین کی سر براھی انٹر نیشنل آپریشنز کے صدر حسین اکن اور رون جونزنے کی جو سی سی آئی مڈل ایسٹ/پاکستان ریجن کےصدر ھیں۔ کوکاکولا کمپنی کی ٹیم کی قیا دت ایڈ پوٹر کر رھے تھے جو کہ گلوبل لیبر ریلیشنز کے ڈائریکٹر ھیں۔ جبکہ آئی یو ایف کی طرف سے جنرل سیکریٹری ران آسوالڈ کے ساتھہ ہدایت گرین فیلڈ اور پیٹر روسمین شامل تھے۔

Choose your language: