تیونس : کوکا کولا میگرائن میں کامیاب ہڑتال

کوکا کولا میگرائن پلانٹ تیونس میں واقع ھے۔اس فیکٹری میں ورکرز نے 26 اور 27 جولائی کو دو دن تک آدھے دن کی ہڑتال کی جو کہ تنخواہ میں اضافہ اور ر صحت وتحفظ جیسے اھم ایشوز پر کی گئی تھی۔ یہ ہڑتال کامیابی سے ہمکنار ھوئی۔ یونین نے اس سال جنوری میں ایجنسی ورک کے خلاف کامیابی حاصل کی تھی اسی کی پیروی کرتے ھوئے اب کمپنی کے تمام ورکرز براہ راست کوکا کولا باٹلر ایس ایف بی ٹی کے ملازم ھیں۔
صحت وتحفظ کے حوالے سے ورکرز ،کارکنان کے حادثے کے علاج کی بہتر سہولیات، ایک بہتر طبی اسٹیشن اور فیکٹری میں ایک ایمبولینس کا مطالبہ کر رھے ھیں۔ دوسرے مطالبات قومی سطح کی گفت و شنید میں شامل کئے جو کہ یو جی ٹی ٹی کنفیڈریشن اور آجروں کی ایسو سی ایشن کے درمیان ھوئے ،تنخواہ میں اضافہ، چھٹی کی تنخواہ کے ساتھ ساتھ بچوں کی اسکول کے اندراج کے لئے بونس جیسے سماجی مطالبات شامل تھے ۔ بعد میں مزاکرات تعطل کا شکار ھو گئے تو ورکرز نے احتجاجی طور پر سرخ رنگ کی پٹیاں اپنے بازؤں پر باندھ لیں۔یہ احتجاج 26 جولائی کو ختم ھوا۔حسین کریمی جو کہ کوکاکولا یونین آرگنائزیشن کے جنرل سیکریٹری اور ایف جی اے ٹی کی ایگزیکٹیو کمیٹی کے ممبر ھیں ۔، انھو ں نے یہ اعلان کیا کہ اب تمام ورکرز براہ راست ملازم ھو چکے ھیں تو ھونے والی تمام اصلاحت ان پر بھی یکساں لاگو ھونگی۔ یہ ان تمام ورکرز کے لئے بہت حوصلہ افزاء ھے جو اس میں شریک رھے، یہ انتظامیہ کی جوابی کاروائی کے خوف کو بھی کم کرتا ھے۔
مزاکرات دوبارہ شروع کیے گئے اور ہڑتال کے دوسرے دن ایک معاہدے پر بشمول اھم مسائل کے دستخط کیے گئے ، اس قانون کے باوجود کہ کمپنی اس صورت میں ایمبولنس رکھنے کی پابند ھیںکہ جب 500 سے زائد ورکرزکام کرتے ھوںجبکہ میگرائن پلانٹ پر 350 ورکرز کام کرتے ھیں اس کے باوجود کمپنی پابند ھو گئی کہ وہ پلانٹ کے لئے ایمبولینس خریدے۔5 فیصد تنخواہ بڑھانے پر اتفاق کیا جبکہ وہ ایسا کرنے کی پابند نہیں ھے لیکن ھم نے انھیں اس پر متفق کر لیا کہ بہر حال یہ ورکرز کے لئے منصفانہ ھے۔ھم ورکرز کے لئے مزید کمپنسیشن کے لئے گفت و شنید کرتے رھیں گے اس حقیقت کے پیش نظر کہ گرمیوں کے سیزن میں ورکرز بہت زیادہ اوور ٹائم کرتے ھیں اور انھیں چھٹیاں نہیں مل سکتیں جس کا اثر ان کی فیملیز پر پڑتا ھے۔ ھم نے اگلے سال ملک میں تمام کوک فیکٹریوں میں یہ پریکٹس کریں گے۔
ہمیں اس جدو جہد میں دوسری فیکٹریوں اور دیگر یونینوں کی حمایت حاصل رہی جو کہ ھماری کامیابی کے لئے بہت اہم تھی۔

Choose your language: